بدھ 29 جنوری 2020ء
بدھ 29 جنوری 2020ء

اہم خبریں

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)دنیا کو تیزی سے پھیلتے ہوئے مہلک کرونا وائرس سے نبرد آزما ہونا پڑ رہا ہے، تاہم سائنسدانوں نے اس کے پھیلنے کی وجہ بھی بتادی۔روزنامہ جنگ میں شائع رپورٹ کے مطابق غیر ملکی ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق کورونا وائرس انسانی جسم میں آنکھوں کی مدد سے داخل ہوجاتا ہے۔چینی ڈاکٹر وانگ گنگفا نے انکشاف کیا کہ انہیں بھی یہ وائرس لاحق ہوسکتا ہے کیونکہ انہوں نے وائرس سےبچنے والے چشمے نہیں پہنے ہوئے تھے۔ماہرین نے اس بات کی تصدیق بھی کی اور متنبہ کیا کہ چھینکوں اور کھانسی سے پھینلے والا یہ مرض نہ googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); صرف آنکھ بلکہ آنکھوں سے بھی انسانی جسم میں داخل ہوسکتا ہے۔ایک برِ اعظم سے دوسرے برِ اعظم تک پھیلنے والے اس وائرس کی وجہ سے صرف چین میں ہی درجوں افراد اپنی جان کی بازی ہار گئے ہیں۔امریکا، جاپان، تائیوان، جنوبی کوریا اور دیگر یورپی ممالک سمیت ایک ہزار سے زائد افراد اس وائرس کا شکار ہوکر اسپتالوں میں علاج کے لیے منتقل کیے جاچکے ہیں۔امپیریئل کالج لندن میں وائرس جینومکس کے پروفیسر پال کیلام نے وائرس کی آنکھوں کے ذریعے انسانی جسم میں داخل ہونے کی تصدیق کردی۔ان کا کہنا تھا کہ اگر آپ کی جانب کسی ایسے شخص کی چھینک آئے تو یہ وائرس لے کر آپ کی جانب آسکتی ہے، اس کی وجہ سے پہلے آنکھیں جلنے لگیں گی یہ لیکریمل ڈکٹ کے ذریعے ناک تک پہنچے گی، پھر سانس میں شامل ہو جائے گی اور ساتھ ساتھ آپ کو بھی چھینکیں لگنا شروع ہوجائیں گی۔اگر آپ آنکھوں کی دوا لیں تو آپ اس دوا کے ذائقے کو اپنے حلق کے اندر تک محسوس کریں گے۔انہوں نے بتایا کہ اس طرح فلو یا دیگر وائرسز کا پھیلنا غیر معلمولی بات نہیں ہے، آپ کو آنکھوں کی وجہ سے بھی سانس لینے کے مسائل کا سامنا ہوسکتا ہے۔پروفیسر پال کیلام نے تجویز پیش کی کہ ڈاکٹر یا طبی امداد فراہم کرنے والا عملہ اس سے بچنے کے لیے لازمی چشموں کا استعمال کرے۔اس معاملے میں ماسک جو آپ کے منہ اور ناک کو تو حفاظت فراہم کرتا ہے لیکن واضح طور پر یہ آنکھوں کی حفاظت نہیں کرتا۔پروفیسر پال کیلام کے اس دعوے کی یونیورسٹی آف ساؤتھمپٹن کے سینیئر ریسرچر ڈاکٹر مائیکل ہیڈ نے تائید کی ہے۔

پاکستان

لاہور(این این آئی) مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما وپنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز نے کہا ہے کہ معاشرے سے برداشت کا مادہ ختم ہوچکا ہے جو کہ کسی بھی معاشرے کی تباہی کی علامت ہے، ہماری حکومت سی پیک کی شکل میں پچاس ارب ڈالر کی بیرونی سرمایہ کاری لائی، اندھیروں کو روشنیوں میں بدلہ جبکہ اب معیشت سسکیاں لے رہی اور ڈوب رہی ہے،لوگ بے روزگار ہورہے ہیں اگر حکومت نے ہوش کے ناخن نہ لئے تو وہ وقت دور نہیں جب قوم ان کا محاسبہ کرے گی۔ حمزہ شہباز نے پنجاب اسمبلی میں ارکان googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); اسمبلی اور پارٹی رہنماؤں سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ کھلنڈروں سے معیشت بہتر نہیں ہو رہی نہ ہی ان سے مہنگائی کنٹرول ہو رہی ہے،گیس اور بجلی کی قیمتوں میں ایک بار پھر ہوش ربا اضافہ کیا جا رہا ہے۔ نوازشریف کے دور حکومت میں اس طرح مہنگائی نہیں تھی جبکہ اب غریب آدمی صبح شام حکومت کو بدعائیں دیتا ہے، وہ وقت دور نہیں جب عوام بہت جلد اس حکومت سے نجات حاصل کریں گے۔انہوں نے کہا کہ جو توقعات اور سبز باغ دکھائے گئے وہ بجلی ا ور گیس کے بلوں کی صورت میں بم بن کر برس رہے ہیں،ہر چیز کا منطقی انجام ہوتا ہے لیکن ان سے مہنگائی کنٹرول نہیں ہورہی۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی سی پیک کی مخالفت کرتی تھی اور آج نواز شریف کے منصوبوں پر تختیاں لگاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ معیشت ڈوب رہی ہے، لوگ بے روزگار ہورہے ہیں،حکومت نے ہوش کے ناخن نہ لے،تو وہ وقت دور نہیں جب قوم ان کا محاسبہ کرے گی - انہوں نے کہا کہ عوام پر ٹیکس، گیس بجلی ریٹ میں اضافہ کرکے عوام کی زندگی میں قیامت برپاکر دی ہے، ہماری حکومت نے سی پیک میں پچاس ارب ڈالر سے ملک سے لوڈ شیڈنگ ختم کی اور اندھیروں کو روشنیوں میں بدلا جبکہ موجودہ حکمران ایک بارپھر ملک کو اندھیروں کی طرف دھکیل رہے ہیں۔

انٹرنیشنل

عزم ہو تو ایسا، چینیوں نے کمال کر دیا، 2 دن میں ایک ہزاربستر کا ہسپتال تعمیر کر لیا

ووہان (نیوز ڈیسک) چین میں ریکارڈ مدت صرف دو دنوں میں کرونا وائرس سے نمٹنے کے لیے ایک ہزار بستروں والا جدید ترین ہسپتا ل مریضوں کے لیے کھول دیا گیا۔ ووہان شہر کے قریب ہسپتا ل کو دن و رات ایک کرکے مکمل کیاگیا۔ یہ دنیا کا پہلا ہسپتا ل قرار دیا جاسکتا ہے جسے صرف دو دنمیں تعمیر کیا گیا۔ جان لیوا مرض کرونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کا ایک گروپ یہاں منتقل بھی کردیا گیا ہے جن کا علاج شروع کر دیا گیا ہے۔چینی حکام کے مطابق یہ جدید ترین ہسپتا ل ہے اور اس میں مریضوں googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); کو کرونا وائرس سے بچانے کے لیے ہر ممکن کوشش کی جارہی ہے۔

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں