پیر 01 جون 2020ء
پیر 01 جون 2020ء

اہم خبریں

اسلام آباد ( آن لائن ) وفاقی حکومت  پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے معاملے پر  عوام سے ایک بار پھر ہاتھ کرگئی ، پٹرول 14روپے فی لیٹر سستا کرنے کی بجائے 7 روپے ہی سستا کیا جبکہ  پٹرول پر عائد  لیوی میں 6 روپے 20پیسے فی لیٹر اضافہ کردیاگیاہے ۔وزارت  پٹرولیم کے ذرائع کے مطابق 6 روپے 20پیسے فی لیٹر لیوی میں  اضافے کے بعد یہ پٹرولیم لیوی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہےجو سفارش  حکومت کو کی گئی تھی وہ پٹرول کی قیمتوں میں 14روپے فی لیٹر کمی سے متعلق تھی لیکن  عالمی منڈی میں تیل googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); کی قیمتوں میں کمی کا پورا فائدہ عوام تک منتقل نہ کیا گیا ۔7روپے پٹرول سستا کرکے 6روپے 20پیسے اس پر لیوی عائد کردی گئی ۔ ذرائع نے بتایا کہ ریونیو میں اضافے کیلئے وزارت خزانہ نے پٹرولیم لیوی بڑھانے کی سفارش کی تھی اوراب یہ شرح 30روپے فی لیٹر تک پہنچ گئی ہے جو اب تک پٹرولیم لیوی کی بلند ترین سطح ہے اورحکومت نے دعویٰ کیا ہے کہ لیوی بڑھانے سے اسے 6ارب روپے کا اضافی ریونیو حاصل ہوگا ۔ ذرائع کا کہنا ہے چونکہ  حکومت کو ایف بی  آر کے ریونیو کے حصول میں بھی شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور کرونا وائرس کی وجہ سے ریونیو کا ہدف حاصل نہیں کیاجاسکے گا تو لہذا شارٹ فال پورا کرنے کیلئے حکومت متبادل طریقے سے ریونیو  اکٹھا کرنے کی کوشش  کررہی ہے ۔ذرائع نے مزید بتایا کہ اگر عالمی منڈی کی قیمتوں کے مطابق پٹرول کم کیاجاتا تو پاکستان میں اس وقت اس کی قیمت پچاس روپے فی لیٹر سے زیادہ نہ ہوتی مگر گزشتہ ماہ بھی حکومت نے پٹرولیم لیوی بڑھا دی تھی اور  جون کیلئے بھی پٹرولیم لیوی بڑھا دی تاکہ ٹیکس حاصل کیاجاسکے ۔

پاکستان

وزیر اعظم نے سیاحت کا شعبہ کھولنے کا عندیہ دیدیا

اسلام آباد (این این آئی) وزیر اعظم عمران خان نے سیاحت کا شعبہ کھولنے کا عندیہ دیدیا ۔ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ سیاحت کا شعبہ کھولنا چاہیے، کیوں کہ بعض علاقوں میں گرمیوں کے تین سے چار مہینے ہی سیاحت ہوتی ہے اور کاروبار چلتا ہے، اگر یہ وقت لاک ڈاؤن میں نکل گیا تو ان علاقوں میں غربت مزید بڑھ جائے گی۔تفصیلات کے مطابق قومی رابطہ کمیٹی کا اجلاس ہوا،اجلاس میں اہم فیصلے کیے گئے ہیں۔ذرائع کے مطابق اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ لاک ڈائون صرف ہفتے اور اتوار کو ہوگا، googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); جمعے کو بھی دکانیں کھلی رہیں گی۔ذرائع کے مطابق اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ دکانیں کھولنے کیلئے پرانے اوقات کار پر عمل ہوگا۔ مارکیٹس اور شاپنگ مال بھی ایس او پیز کے تحت کھلے رہیں گے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نے بیرون ملک پھنسے پاکستانیوں کو فوری طور پر واپس لانے کا حکم دے دیا۔‎زیراعظم عمران خان کے زیر صدارت قومی رابطہ کمیٹی کے اہم اجلاس میں ہفتے میں دو دن مکمل لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ کے اجلاس میں کورونا وائرس کے پیش نظر اہم فیصلوں پر غور کیا گیا اور صوبوں کی تجاویز کی روشنی میں اہم فیصلے کئے گئے۔قومی رابطہ کمیٹی اجلاس میں ہفتے میں دو دن مکمل لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا گیا ہے، ہفتہ اور اتوار مکمل لاک ڈاؤن رہے گا تاہم 5 دن کاروبار کی اجازت ہو گی۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ کاروباری مراکز شام 7 بجے تک کھل سکیں گے جبکہ وزارت ریلوے 40 ٹرینیں چلا سکے گی۔ وزیراعظم نے قومی رابطہ کمیٹی اجلاس میں ہونے والے ان اہم فیصلوں کی منظوری دے دی ہے۔

انٹرنیشنل

کورونا وائرس اب پہلے جیسا جان لیوا نہیں رہا،کووڈ 19 کی بیماری پہلے سے مختلف ہو گئی ، اطالوی طبی ماہرین نے خوشخبری سنا دی

روم (این این آئی)اٹلی سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹروں نے دعویٰ کیا ہے کہ نئے کورونا وائرس اب اتنا جان لیوا نہیں رہا جتنا عالمی وبا کے آغاز پر تھا۔مییا رپورٹ کے مطابق میلان کے سان ریفایلی ہاسپٹل کے سربراہ ڈاکٹر البرٹو زینگریلو نے ٹی وی انٹرویو کے دوران کہا کہ حقیقت تو یہ ہے کہ طبی لحاظ سے یہ وائرس اب اٹلی میں موجود نہیں۔انہوںنے کہاکہ گزشتہ 10 دن کے دوران سواب ٹیسٹوں میں جووائرل لوڈ دیکھا گیا وہ ایک یا 2 ماہ قبل کے مقابلے میں نہ ہونے کے برابر ہے۔انہوں نے اطالوی حکومت پر لاک ڈاؤن کی googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); پابندیاں اٹھانے کے عمل کو جاری رکھنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ وائرس کی دوسری لہر کا انتباہ اٹلی میں غیرضروری خوف پھیلانے کا باعث بن رہا ہے۔خیال رہے کہ میلان اٹلی کے خطے لمبارڈی میں واقع ہے جو اس وبائی مرض سے بہت بری طرح متاثر ہوا تھا۔شمال مغربی اٹلی کے شہر جینوا کے سان مارٹینو ہاسپٹل کے وبائی امراض کے مرکز کے سربراہ میٹیو باسیٹی نے بھی ڈاکٹر البرٹو کی بات سے اتفاق کرتے ہوئے کہا کہ کورونا وائرس اب اتنا جان لیوا نہیں رہا جتنا پہلے تھا۔ان کا کہنا تھا کہ اس وائرس کی جو طاقت 2 ماہ پہلے تھی وہ آج بہت کم رہ گئی ہے، یہ واضح ہے کہ آج کووڈ 19 کی بیماری پہلے سے مختلف ہے۔دوسری جانب سے اٹلی کی وزیر صحت ساندرا زمپا کا کہنا ہے کہ ان ڈاکٹروں کے دعوے کے حوالے سے شواہد ناکافی ہیں،انہوں نے زور دیا کہ شہری سماجی دوری کی ہدایات پر عمل جاری رکھیں۔ان کا کہنا تھا کہ اس خیال کی حمایت کے لیے سائنسی شواہد اب تک سامنے نہیں آئے وائرس اب غائب ہوچکا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم اطالوی شہریوں پر زور دیتے ہیں کہ وہ مکمل احتیاط کا مظاہر کرتے ہوئے جسمانی طور پر لوگوں سے دوری کو یقینی بنائیں، زیادہ افراد کے اجتماع سے گریز کریں، اپنے ہاتھوں کو اکثر دھوئیں اور ماسک پہنیں۔

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں