هفته 04 جولائی 2020ء
هفته 04 جولائی 2020ء

اہم خبریں

پٹرولیم بحران کیس، وزیر اعظم کے پرنسپل سیکرٹری اعظم خان نے لاہور ہائیکورٹ پیش نہ ہو کر ایڈیشنل اٹارنی جنرل کو بھی مشکل میں ڈال دیا ، چیف جسٹس

اسلام آباد(آن لائن)پیٹرولیم اسکینڈل میں راتوں رات وزیر اعظم سے پیٹرول کی قیمتوں میں تاریخی اضافے کی سمری پر دستخط کرانے والے پرنسپل سیکرٹری ٹو پی ایم اعظم خان نے پیٹرول شارٹیج کے خلاف مقدمے میں لاہور ہائیکورٹ پیش نہ ہو کر اپنے ساتھ ایڈیشنل اٹارنی جنرل کو بھی مشکل میں ڈال دیا ہے۔ بیوروکریسی میں خان اعظم کہلوانے والے اعظم خان پیٹرول بحران کیس میںچیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس محمد قاسم خان کی طرف سے دو بار اصالتاً طلبی کے باوجود پیش نہیں ہوئے اور 30 جون کی سماعت پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل سے عدالت کو بتایا کہ اعظم googletag.cmd.push(function() { googletag.display('div-gpt-ad-1557484938290-0'); }); googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); خان کابینہ کے اجلاس کی وجہ سے پیش نہیں ہوئے۔ جب کہ اس روز اسمبلی کا بجٹ اجلاس تھا اور کابینہ کا کوئی اجلاس نہیں ہوا۔ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے اعظم خان کی عدم حاضری پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے ریمارکس دیئے تھے کہ "سنا ہے اعظم خان بولتے ہیں تو ان کے مونہہ سے قانون نکلتا ہے، پھر عدالت عالیہ نے انہیں 9 جولائی پیش ہونے کا حکم دیا ہے۔ عدالت کے روبرو ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے یہ کہہ دیا کہ اعظم خان کابینہ اجلاس کی وجہ سے پیش نہیں ہو سکے، تاہم آئندہ سماعت پر عدالت نے اس غلط بیانی کا نوٹس لے لیا تو اعظم خان نہ صرف خود مشکل میں پڑ سکتے ہیں بلکہ اپنے ساتھ ایڈیشنل اٹارنی جنرل اور حکومت کو بھی مشکل میں ڈال سکتے ہیں۔ وزیراعظم جو انصاف کی سربلندی کے نعرے کے ساتھ اقتدار میں آئے تھے کا اپنا پرنسپل سیکریٹری خود کو قانون سے بالاتر سمجھتے ہوئے اعلیٰ عدالتوں میں پیش نہیں ہوتا، جس سے نہ صرف وزیراعظم کے وڑن کو نقصان پہنچ رہا ہے بلکہ حکومت کی مشکلات میں بھی اضافہ ہو رہا ہے۔

پاکستان

پٹرولیم بحران کیس، وزیر اعظم کے پرنسپل سیکرٹری اعظم خان نے لاہور ہائیکورٹ پیش نہ ہو کر ایڈیشنل اٹارنی جنرل کو بھی مشکل میں ڈال دیا ، چیف جسٹس

اسلام آباد(آن لائن)پیٹرولیم اسکینڈل میں راتوں رات وزیر اعظم سے پیٹرول کی قیمتوں میں تاریخی اضافے کی سمری پر دستخط کرانے والے پرنسپل سیکرٹری ٹو پی ایم اعظم خان نے پیٹرول شارٹیج کے خلاف مقدمے میں لاہور ہائیکورٹ پیش نہ ہو کر اپنے ساتھ ایڈیشنل اٹارنی جنرل کو بھی مشکل میں ڈال دیا ہے۔ بیوروکریسی میں خان اعظم کہلوانے والے اعظم خان پیٹرول بحران کیس میںچیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس محمد قاسم خان کی طرف سے دو بار اصالتاً طلبی کے باوجود پیش نہیں ہوئے اور 30 جون کی سماعت پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل سے عدالت کو بتایا کہ اعظم googletag.cmd.push(function() { googletag.display('div-gpt-ad-1557484938290-0'); }); googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); خان کابینہ کے اجلاس کی وجہ سے پیش نہیں ہوئے۔ جب کہ اس روز اسمبلی کا بجٹ اجلاس تھا اور کابینہ کا کوئی اجلاس نہیں ہوا۔ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے اعظم خان کی عدم حاضری پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے ریمارکس دیئے تھے کہ "سنا ہے اعظم خان بولتے ہیں تو ان کے مونہہ سے قانون نکلتا ہے، پھر عدالت عالیہ نے انہیں 9 جولائی پیش ہونے کا حکم دیا ہے۔ عدالت کے روبرو ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے یہ کہہ دیا کہ اعظم خان کابینہ اجلاس کی وجہ سے پیش نہیں ہو سکے، تاہم آئندہ سماعت پر عدالت نے اس غلط بیانی کا نوٹس لے لیا تو اعظم خان نہ صرف خود مشکل میں پڑ سکتے ہیں بلکہ اپنے ساتھ ایڈیشنل اٹارنی جنرل اور حکومت کو بھی مشکل میں ڈال سکتے ہیں۔ وزیراعظم جو انصاف کی سربلندی کے نعرے کے ساتھ اقتدار میں آئے تھے کا اپنا پرنسپل سیکریٹری خود کو قانون سے بالاتر سمجھتے ہوئے اعلیٰ عدالتوں میں پیش نہیں ہوتا، جس سے نہ صرف وزیراعظم کے وڑن کو نقصان پہنچ رہا ہے بلکہ حکومت کی مشکلات میں بھی اضافہ ہو رہا ہے۔

انٹرنیشنل

یورپی یونین نے کورونا مریضوں کے لیے دوا  کی منظوری دیدی یہ دوا کون سی ہے ،جانئے

برسلز (آن لائن) یورپی یونین نے عالمی وبا قرار دیے جانے والے کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کے علاج کے لیے ریمڈیسیور کے استعمال کی منظوری دے دی ہے۔ طبی ماہرین کے مطابق اینٹی وائرل دوا ریمڈیسیور کو ایبولا کے علاج کی خاطر تیار کیا گیا تھا۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکہ کی فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن نے دو مئی 2020 کو کورونا وائرس سےمتاثرہ مریضوں کے علاج کے لیے ریمڈیسیویئرکے استعمال کی منظوری دی تھی۔امریکی نائب صدر مائیک پنس نے دوا کے استعمال کی اجازت دینے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ ابتدائی طور پر 15 googletag.cmd.push(function() { googletag.display('div-gpt-ad-1557484938290-0'); }); googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); لاکھ ریمڈیسیویئراسپتالوں میں تقسیم کردی جائیں گی۔امریکی حکام کا مؤقف تھا کہ ریمڈیسیویئر کے استعمال سے کورونا کے مریضوں کو صحتیاب ہونے میں ایک تہائی کم وقت لگے گا۔امریکی حکام کے حوالے سے یہ فیصلہ سامنے آیا تھا کہ کمپنی ابتدائی طورپرایک اعشاریہ پانچ ملین خوراک کورونا سے متاثرہ مریضوں کے لیے مہیا کرے گی۔امریکی نائب مائیک پنس کی جانب سے کیے جانے والے اعلان سے دو دن قبل امریکہ کے ممتاز ڈاکٹراورالرجی سینٹر کے ڈائریکٹر ڈاکٹر فاؤسی کے حوالے سے یہ بات سامنے آئی تھی کہ ایبولا کے لیے تیار کی جانے والی دوا کورونا کے مریضوں کو استعمال کے لیے دینے کی اجازت دی جا سکتی ہے۔بھارت نے دو جون 2020 کو کورونا سے متاثرہ مریضوں کے علاج کی خاطر ہنگامی بنیادوں پر ریمڈیسیور کے استعمال کی منظوری دی تھی۔بھارت کے ڈرگ کنٹرولر جنرل کا اس ضمن میں کہنا تھا کہ ریمڈیسیورکے استعمال کی اجازت اس شرط پردی گئی ہے کہ ہنگامی صورتحال کے دوران کورونا کے مریضوں کو اس کی صرف پانچ خوراکیں دی جائیں گی۔دلچسپ امر ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے 19 مئی کو فرنٹ لائن پہ کام کرنے والوں سے کہا تھا کہ وہ کورونا سے بچاؤ کے لیے ہائیڈرو کلوروکین کا استعمال کریں۔ امریکی صدر کا دعویٰ تھا کہ وہ خود گزشتہ ڈیڑھ ہفتے سے یہ دوا استعمال کررہے ہیں۔

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں