پیر 26  اگست 2019ء
پیر 26  اگست 2019ء

لاہور(این این آئی) جمعیت علمائے اسلام (ف)کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ ”ملک میں ان کی نہیں کسی اور کی حکومت ہے“،25جولائی کو پشاور میں اور 28مارچ کو کوئٹہ میں ملین مارچ ہوگا،حج او رمحرم کے ایام کو دیکھ رہے ہیں جس کی وجہ سے اسلام آباد کی طرف سفر میں رکاوٹ او رتعطل آرہا ہے لیکن ہمارا فیصلہ اٹل ہے، پاکستان کی نظریاتی شناخت کو تبدیل کرنے کیلئے گزشتہ دس سالوں سے عمران خان کی صورت میں تیاریاں کی جارہی تھیں کہ اسے وزیر اعظم بنایا جائے گا،آج آئین میں موجود اسلامی دفعات، ناموس رسالت اور googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); ختم نبوت نشانے پر ہے، امریکی صدر ٹرمپ نے حافظ سعید کی گرفتاری کا بھی کریڈٹ لیا ہے،ملک کا ایسا کوئی کونہ اور گلی محلہ نہیں ملے گا جہاں پر مدرسہ نہ ہو لیکن ہمیں کہہ رہے ہیں قومی دھارے میں آ جائے، ہم آپ کو کہتے ہیں آپ اسلامی دھارے میں آئیں۔جامعہ اشرفیہ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانافضل الرحمن نے کہاکہ حکومت کی ناکام پالیسیوں کے باعث ملکی معیشت تباہ ہوچکی ہے، مہنگائی سے عوام کی کمرٹوٹ گئی ہے، پہلے بجٹ میں ہی تاجروں نے اپنی دکانیں بند کردیں، حکومت کے پہلے بجٹ پر تاجربرادری نے جو ردعمل دیا ہے وہ اس پر عدم اعتماد ہے۔مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ جو لوگ ملک کی معاشی تباہی کے ذمہ دارہیں وہ دھڑا دھڑ سیاسی لوگوں کو گرفتارکررہے ہیں اور اپنی نالائقی سے توجہ ہٹانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں ان کی نہیں کسی اور کی حکومت ہے، ”ملک میں ان کی نہیں کسی اور کی حکومت ہے“۔ انہوں نے کہا کہ نوازشریف سے متعلق جج کی ویڈیو سامنے آنے کے بعد انہیں رہا کردینا چاہیے، جھوٹے الزامات کے تحت جیل میں رکھنا حبس بے جا میں رکھنے کے مترادف ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمارا توسیاسی موقف واضح ہے کہ موجودہ حکومت دھاندلی سے آئی۔ سابقہ دور میں صرف ایک جماعت نے دھاندلی کا الزام لگایا اور اس کے کہنے پر پہلے چار حلقے کھولے گئے اور پھر اس کا مطالبہ بڑھتا گیا۔ آج تو ساری جماعتیں کہہ رہی ہیں کہ دھاندلی ہوئی ہے لیکن ایک جماعت کہہ رہے ہے کہ اگر ہمارے حق میں دھاندلی ہوئی ہے تو یہ جائز ہے۔ا نہوں نے کہا کہ 25 جولائی کو ملک بھرمیں یوم سیاہ منائیں گے اور دنیا کوبتائیں کہ اس دن دھاندلی سے یہ لوگ اقتدارمیں آئے تھے۔مولانا فضل الرحمان نے مزید کہا کہ حافظ سعید کی گرفتاری پر امریکی صدر نے کریڈٹ لیا ہے کہ یہ گرفتاری میرے دباؤ پر ہوئی ہے، حافظ سعید کوایسے وقت میں گرفتارکیا گیا جب عمران خان امریکہ جارہے تھے۔ انہوں نے مدارس کو قومی دھارے میں شامل کرنے کے حکومتی اقدامات کے سوال کے جواب میں کہا کہ ہم تو پہلے ہی قومی دھارے میں شامل ہیں ہمیں قومی دھارے میں شامل کرنے والے اسلامی دھارے میں شامل ہوں۔انہوں نے چیئرمین سینیٹ کی تبدیلی کے حوالے سے اپوزیشن کے پاس تعداد پوری ہے۔

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں