پیر 10  اگست 2020ء
پیر 10  اگست 2020ء

’’پلیز مجھے معاف کر دیں، ایم پی اے شپ میرے پاس رہنے دیں‘‘ عظمی کاردار کی عمران خان کی بہنوں سے منت سماجت ،ہر جگہ سے انکار

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)تحریک انصاف سے فارغ کی جانے والی رکن صوبائی اسمبلی عظمیٰ کاردار نے اپنی ایم پی اے کی سیٹ بچانےکیلئے کوششیں تیز کر دیں ہیں۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز وزیراعظم پاکستان عمران خان کی ہدایت پر تحریک انصاف نے انہیں پارٹی کی بنیادی رکنیت سے فارغ کردیاتھاجس کے بعدانہوں نے معافی تلافی کیلئے وزیراعظم عمران خان کی بہنوں سے رابطہ کیا لیکن وزیراعظم کی بہنوں نے انکی سفارش کرنے سے معذرت کی ۔ قومی اخبار میں شائع رپورٹ کے مطابق اور کہا کہ وہ سیاسی معاملات میں اپنے بھائی سے کوئی بات نہیں کرتیں، ایم پی اے کی googletag.cmd.push(function() { googletag.display('div-gpt-ad-1557484938290-0'); }); googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); سیٹ اور مراعات بچانے کی غرض سے انہوں نے پارٹی کے دیگر عہدیداران سے بھی رابطے کیے لیکن پارٹی سے نکالے جانے کے بعد اور چیئرمین پی آٹی آئی کے سخت ایکشن کے بعد کوئی بھی پارٹی عہدیدار انکی طرف داری کرنے اور سفارش کرنے کیلئے تیار نہیں اور وزیراعظم اور خاتون اول کے بارے میں انکی آڈیو لیکس پر پارٹی کے اندرانکی شدید سبکی ہوئی ہے اور انکے خلاف غصے کی لہر مزید پیدا ہوئی ہے ، ان آڈیولیکس سے قبل بھی تحریک انصاف کے اندر انکا رویہ انتہائی تکبرانہ رہا جس کی وجہ سے کوئی اس مسئلے پر بات کرنے یا پارٹی لیڈر شپ سے بات کرنے کیلئے تیار نہیں، ذرائع کے مطابق اگلے دو سے تین روز میں انہیں پارٹی کی طرف سے ہدایت کی جائیگی کہ وہ اپنی مخصوص نشست سے استعفیٰ دیں تاکہ اس سیٹ پر کوئی مخلص خاتون آسکے، عظمیٰ کاردار نے اگر پارٹی کے کہنے کے باوجود استعفیٰ نہ دیا تو سپیکر پنجاب اسمبلی انکی رکنیت معطلی کیلئے الیکشن کمیشن کو خط لکھیں گے جہاں الیکشن کمیشن انکی رکنیت ختم ہونے کا نوٹیفکیشن جاری کردیگا، لسٹ میں اگلے نمبر پر بتول جنجوعہ کا نام ہے ، وہ ایم پی اے بن سکتی ہیں ۔

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں