اتوار 05 اپریل 2020ء
اتوار 05 اپریل 2020ء

“مغل خاندان ترک تھا، بابر خود کو ترک کہلانے میں فخر محسوس کرتا تھا

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)اللہ تعالی اس قوم پر اپنا رحم فرمائے جس کے لیڈر اتنے بے خبر اور جاہل ہوں ۔ وزیراعظم عمران خان کا بیان درست قرار ۔ تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی پروگرام میں حسن نثار نے برصغیر میں ترکوں کی حکومت کی تاریخ بیان کر دی ۔ سینئر تجزیہ کار کا کہنا تھاکہ اللہ اس قوم کے حال پر رحم کرے جس کے لیڈر اتنے بے خبر اور جاہل ہیں ۔جاوید ہاشمی کو تو میں یونیورسٹی کےدور سے جانتا ہوں لیکن میرا یہ خیال تھا کہ شیریں رحمان پڑھی لکھی خاتون ہیں ۔ سینئر صحافی حسن نثار کا کہنا googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); تھا کہ جنہیں مغل کہاجاتا ہے وہ دراصل ترک ہی ہیں ۔ بابر کےگھرانے میں ترک زبان بولی جاتی تھی جبکہ درباری فارسی تھے ۔ یہ جو کتاب ہے جسے ہم تزکِ بابری کہتے ہیں یا بابر نامہ یہ ترکی میں لکھا گیا تھا۔کتاب میں لکھا گیا کہ بابر کی حکومت عام طور پر خاندان مغلیہ کہلاتی ہے یہ درست نہیں کیونکہ بابر ترک تھا اور ترک ہونے کا فخر بھی کرتا تھا ۔ سینئر تجزیہ کار کا مزید کہنا تھا کہ مغل ان کے ہاں گالی طور پر لفظ استعمال ہوتا ہے ، ہم نے تو مغل اعظم طرز کی فلمیں دیکھ رکھی ہیں ۔ میں وزیراعظم عمران خان کے بیان کو بالکل درست سمجھتا ہوں۔حسن نثار نے وزیراعظم پر کڑی تنقید کرنے والے لیڈران کو کہا کہ اگر کوئی عام انسان ایسی بات کرے تو سمجھ میں آتی ہے لیکن کوئی ملک کا لیڈر ایسی باتیں کرے تو یہ شرمناک ہے ، میرے نظر میں اس سے بڑی جہالت کوئی نہیں ۔

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں