منگل 20  اگست 2019ء
منگل 20  اگست 2019ء

آرٹیکل 370 کے خاتمے کے حکومتی  فیصلے کو کالعدم قرار دینے کی درخواست پر بھارتی سپریم کورٹ نے حیرت انگیزفیصلہ سنادیا

نئی دہلی  (آن لائن) آرٹیکل 370 کے خاتمے کے حکومتی  فیصلے کو کالعدم قرار دینے کی درخواست پر بھارتی سپریم کورٹ نے فیصلہ سنا دیا، بھارت کی اعلی ترین عدالت نے آرٹیکل 370 خاتمے کیخلاف درخواست سننے سے انکار کر دیا۔تفصیلات کے مطابق بھارتی سپریم کورٹ کے جسٹس رمانا نے آرٹیکل 370 کے خاتمے کیخلاف دائر ہونیوالی درخواست کی فوری سماعت سے انکار کر دیا ہے۔ جسٹس رمانا نے سماعت یہ کہہ کر کرنے سے انکار کر دیا کہ اس کا فیصلہ چیف جسٹس رنجن گگوئی کریں گے۔ انہوں نے مقبوضہ کشمیر سے کرفیو ہٹانے کی درخواست کی سماعت سے googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); بھی انکار کردیا۔ بھارتی حکومت کی جانب سے آئین کے آرٹیکل 370 کے خاتمے کیخلاف منوہر لعل شرما ایڈووکیٹ نے سپریم کورٹ سے رجوع کیا تھا۔ جسٹس رمانا نے استفسار کیا کہ کیا اقوام متحدہ بھارت کی آئینی ترمیم کو روک دیگی؟ جس پر درخواست گزار نے کہا کہ اقوام متحدہ کے پاس ایسا اختیار نہیں ہے۔ابتدائی سماعت کے بعد جسٹس رمانا نے درخواست کی فوری سماعت سے انکار کردیا اور کہا کہ اس کی سماعت کیلئے تاریخ چیف جسٹس رنجن گگوئی مقرر کریں گے۔ واضح رہے کہ 5 اگست کو بھارت کی مودی سرکار نے مقبوضہ کشمیر کیلئے آرٹیکل 370 ختم کرکے کشمیر کی خود مختار حیثیت کو ختم کر دیا تھا۔ مودی سرکار نے آرٹیکل 370 کو ختم کرکے کشمیر پر زبردستی قبضے کو تقویت دی اور اپنی مزید فوج وادی میں اتار دی ہے۔ پچھلے کئی روز سے کشمیر میں کرفیو نافذ ہے اور یہ بھی اطلاعات ہیں کہ مودی سرکار بڑے پیمانے پر کشمیریوں کے قتل عام کی منصوبہ بندی کر رہی ہے۔

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں