جمعرات 06  اگست 2020ء
جمعرات 06  اگست 2020ء

چین نے کورونا وائرس پر تنقید کرنے والے پروفیسر کو گرفتار کرلیا

بیجنگ(این این آئی)چینی حکام نے ایک مضمون میں کورونا وائرس کی عالمی وبا سے متعلق چینی صدر شی جن پنگ پر تنققید اور ان پر ظالم حکمران ہونے کا الزام لگانے والے قانون کے پروفیسر کو حراست میں لے لیا۔میڈیارپورٹس کے مطابق سو ژانگرون چین کے سنسرڈ نظام تعلیم میں حکومت کے ایک غیرمعمولی ناقد ہیں۔ان کے ایک دوست نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہسو ژانگرون کو گزشتہ روز بیجنگ کے مضافات میں واقع ان کے گھر سے 20 سے زیادہ افراد لے گئے۔سو ژانگرون نے رواں برس فروری میں ایک مضمون شائع کیا تھا جس googletag.cmd.push(function() { googletag.display('div-gpt-ad-1557484938290-0'); }); googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); میں انہوں نے شی جن پنگ کی جانب سے فروغ دی گئی دھوکا دہی اور سنسرشپ کی ثقافت کو کوورنا وائرس کے پھیلا کا مورد الزام ٹھہرایا تھا۔بیرون ملک ویب سائٹس پر شائع ہونے والے مضمون میں انہوں نے کہا تھا کہ چین کا 'قائدانہ نظام خود حکمرانی کے ڈھانچے کو تباہ کر رہا ہے۔انہوں نے مزید لکھا تھا کہ وائرس کے مرکز صوبے ہوبے میں افراتفری نے چین کے نظام میں موجود مسائل کی عکاسی کی۔ سو ژانگرون نے لکھا کہ چین صرف ایک شخص کے زیر قیادت ہے لیکن یہ شخص اندھیرے میں ہے جو ظالمانہ حکمرانی کرتا ہے اور حکمرانی کا کوئی طریقہ نہیں رکھتا۔انہوں نے کہا تھا کہ اگرچہ وہ طاقت کے ساتھ کھیلنے میں مہارت رکھتا ہے جس کی وجہ سے پورے ملک کو مشکل کا سامنا کرنا پڑا۔ اپنے مضمون میں سو ژانگرون یہ بھی پیش گوئی کی تھی کہ چین میں جاری معاشی سست روی 'سیاسی و علمی برہمی اور معاشرتی کشمکش' کے ساتھ ساتھ 'قومی اعتماد کے خاتم' کا سبب بنے گی۔

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں