جمعه 22 نومبر 2019ء
جمعه 22 نومبر 2019ء

پاکستانی اور چینی کمپنیوں کا خوراک کے شعبہ میں شراکت داری کے منصوبہ کے لئے 42 ملین ڈالر کے معاہدے پر دستخط

بیجنگ(آن لائن)پاکستانی اور چینی کمپنیوں نے چین میں منعقدہ امپورٹ ایکسپو کے موقع پر خوراک کے شعبہ میں شراکت داری کے منصوبہ کے لئے 42ملین ڈالر کے معاہدے پر دستخط کئے ہیں۔ ایک سڑک ایک خطے کے نظریئے کے تحت شنگھائی میں منعقد ہونے والے دوسرے چائنہ انٹرنیشنل امپورٹ ایکسپو (سی آئی آئی ای) کے موقع پر چین کی سنیک تیار کرنے والی ایک کمپنی نے پاکستان کی مونگ پھلی فراہم کرنے والی ایک کمپنی کے ساتھ معاہدہ کیا ہے۔جمعرات کو اس حوالے سے چینی میڈیا نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ ہالو فوڈز پاکستان مونگ پھلی کا بڑا googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); خریدار اور پروسیسر ہے جو آئندہ دس سال کے دوران سنیکتیار کرنے والی چینی کمپنی بی سٹورکو مونگ پھلی فراہم کرے گا۔ بی سٹور کے سی ای او اور صدر یانگ ین فن نے کہا ہے کہ ہماری کمپنی کے لئے ہاتھ سے نکلی ہوئی مونگ پھلی سب سے مہنگی پراڈکٹ ہے جس کی طلب میں سالانہ 20فیصد اضافہ ہو رہا ہے۔ہالو فوڈز کے فنانشل ہیڈ شہباز صدیقی نے اس حوالے سے کہا ہے کہ چین کی کمپنی کے ساتھ اس طرح کے اشتراک کار سے پاکستانی کمپنی کو چینی منڈیوں کی استعداد اور رسائی کے حوالے سے مزید معلومات دستیاب ہوں گی۔انہوں نے کہا کہ معاہدے سے پاکستان اور چین کے درمیان زرعی و صنعتی شعبوں میں باہمی تعاون اور اشتراک کار کے فروغ میں مدد ملے گی۔

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں