منگل 02 جون 2020ء
منگل 02 جون 2020ء

اہم خبریں

پاکستان کے بڑے صوبے میں تھری اور فور جی انٹرنیٹ سروس دو روز کے لئے بند کردی گئی

کوئٹہ(این این آئی) بلوچستان کے درالحکومت کوئٹہ میں تھری اور فور جی انٹرنیٹ سروس دو روز کے لئے بند کردی گئی ۔تفصیلات کے مطابق پیر کی شب کوئٹہ شہر اور اسکے 20کلو میٹراطراف میں تھری اور فورجی سروس بند کردی گئی ،ذرائع کے مطابق یہ سروس پیر کی شام سے بدھ کی دوپہر دو بجے تک بند رہے گی تاہم سروس بند کرنے کی وجوہات معلوم نہ ہوسکیں ، اس حوالے سے رابطہ کرنے پر حکومت بلوچستان کے ترجمانلیاقت شاہوانی نے لاعلمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکومت بلوچستان نے کوئٹہ میں تھری او ر فور جی سروس بند googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); نہیں کی نہ ہی ایسی کوئی سفارش وفاقی حکومت کو بھیجی گئی ہے البتہ وفاقی حکومت کی جانب سے اگر یہ اقدام کیاگیا ہے تو اس متعلق علم نہیں ہے، دوسری جانب اچانک سروس بندش کی وجہ سے عوام کو تشویش اور مشکلات کا سامنا کرنا پڑا جبکہ پی ٹی اے کے ترجمان سے متعدد بار رابطہ کرنے کی کوشش کی گئی تاہم ان سے رابطہ نہ ہوسکا۔

پاکستان

اسلام آباد (این این آئی)پاکستان مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ کسی کی بیماری پر سیاست کرنا برا عمل ہے،  یہاں انسان کو مرکر دکھانا پڑتا ہے کہ بیمار ہے۔اپنے بیان میں مریم اورنگزیب نے کہاکہ اسلام آباد میں کورونا مریضوں کی تعداد2400 سے زائد ہوچکی جن کیلئے صرف 12 وینٹی لیٹرز کام کررہے ہیں ور اس میں سے وفاقی دارالحکومت کے سب سے بڑے اسپتال پمز کے9 وینٹی لیٹرز کام کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پمز میں 80 بستر کے آئسولیشن وارڈ میں دیگر آئی سی یو  سے یہ 9 وینٹی لیٹرز منتقل کیے googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); گئے جن میں سے سرجیکل آئی سی یو سے 4، میڈیکل آئی سی یو کے 2 وینٹی لیٹرز کورونا وارڈ میں منتقل کیے گئے ،کارڈیالوجی سرجری آئی سی یو کے 3 وینٹی لیٹرز بھی کورونا وارڈ میں منتقل کیے گئے۔انہوںنے کہاکہ اسلام آباد کے دوسرے بڑے اسپتال پولی کلینک میں صرف 4 وینٹی لیٹرز ہیں اور کورونا مریضوں کیلئے صرف 10 بستروں کا آئسولیشن وارڈ ہے، اسلام آباد کے سرکاری ہسپتالوں میں کْل 90 بستر کے کورونا آئسولیشن وارڈ کے سوا اور کوئی انتظام نہیں۔مریم اورنگزیب نے کہاکہ لواحقین مریضوں کیلئے وینٹی لیٹرز لینے کی خاطر سفارشیں اور منتیں کرنے پر مجبور ہیں لہٰذا بتایا جائے جو وینٹی لیٹرز آئے تھے، وہ کہاں ہیں؟ اسلام آباد کے اسپتالوں کو کتنے ملے؟انہوں نے کہا کہ عمران خان پریس کانفرنس، پریزنٹیشن، کمپیوٹر، بیانات اور دعوؤں سیکورونا کا مقابلہ کررہے ہیں، وفاقی وزیر برائے صحت عمران خان لاپتہ ہیں اور صحت کا نظام ٹھیکے پر چل رہا ہے، حکومت جھوٹ پر جھوٹ بول کر قوم کی زندگیوں سے کھیل رہی ہے اور کورونا کی بڑھتی تعداد کے پیش نظر انتظامات اور اقدامات کے بجائے لوگوں کی زندگی خطرے میں ڈالی جارہی ہے۔مریم اورنگزیب نے کہا کہ کورونا کے مریض سخت مشکل میں ہیں، خدا کیلئے جھوٹ بول کر عوام کی زندگیوں سے نہ کھیلیں، یہاں اس وقت انسان کو مرکر دکھانا پڑتا ہے کہ میں بیمار ہوں، کسی کی بیماری پر سیاست کرنا برا عمل ہے۔سابق وزیراعظم کے ذاتی معالج کے حوالے سے انہوں نے بتایا کہ ڈاکٹر عدنان ملک میں اپنے کچھ کام نمٹا کر 4 سے 5 دن میں واپس لندن روانہ ہوجائیں گے۔

انٹرنیشنل

جسمانی ساخت پر نامناسب تبصرہ، کیٹ مڈلٹن نے میگزین کو قانونی نوٹس بھجوادیا

لندن (این این آئی)برطانوی شاہی خاندان کی بڑی بہو ڈچز آف کیمبرج کیتھرائن کیٹ مڈلٹن اور ان کے شوہر ڈیوک آف کیمبرج شہزادہ ولیم نے معروف برطانوی میگزین کو نامناسب مضمون شائع کرنے پر قانونی نوٹس بھجوادیا۔شہزادہ ہیری اور ان کی اہلیہ کیٹ مڈلٹن نے برطانیہ کی معروف میگزین ٹیٹلر کی انتظامیہ کو قانونی نوٹس بھجواتے ہوئے انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ کیٹ مڈلٹن سے متعلق شائع کیے گئےمضمون کو انٹرنیٹ سے ہٹادے۔برطانوی فیشن میگزین ہارپر بازار نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ کیٹ مڈلٹن اور ان کے شوہر نے ٹیٹلر میگزین کو قانونی نوٹس بھجواتے ہوئے میگزین googletag.pubads().definePassback('/1001388/JW_JavedCh', [1, 1]).display(); سے فوری طور پر مضمون ہٹانے کا مطالبہ کیا ہے۔شاہی جوڑے نے اپنے قانونی نوٹس میں میگزین کے مضمون کو نامناسب قرار دیتے ہوئے انتظامیہ پر واضح بھی کیا کہ مضمون کو نہ ہٹائے جانے کی صورت میں قانونی کارروائی کی جا سکتی ہے۔دوسری جانب فیشن میگزین ان اسٹائل نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ کیٹ مڈلٹن کے حوالے سے شائع کیے گئے مضمون کو ہٹائے جانے پر ٹیٹلر میگزین کی انتظامیہ نے انکار کردیا۔ان اسٹال نے اپنی رپورٹ میں انٹرٹینمنٹ آن لائن کی خبر کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ میگزین کی انتظامیہ مضمون کو نہ ہٹائے جانے پر بضد ہے اور انتظامیہ اس ضمن میں کسی بھی قانونی کارروائی کے وقت مضمون کے ہر ایک لفظ کو تسلیم کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔کیٹ مڈلٹن اور ان کے شوہر کی جانب سے میگزین کے خلاف قانونی کارروائی کرنے کا عندیہ ایک ایسے وقت میں دیا ہے جب کہ مذکورہ میگزین نے مسلسل دوسری بار شاہی خاندان کی بڑی بہو کے حوالے سے نامناسب مضمون شائع کیا۔ٹیٹلر میگزین کا حالیہ مضمون ان کے آنے والے یعنی جولائی تا اگست کے شمارے میں شامل ہوگا لیکن اس مضمون کو انٹرنیٹ پر پہلے ہی شائع کردیا گیا اور آنے والے شمارے کے سرورق کی تصویر بھی شیئر کردی گئی۔ٹیٹلر میگزین نے اپنے آنے والے شمارے کے سرورق پر کیٹ مڈلٹن کی سفید لباس میں مسکرانے والی تصویر دیتے ہوئے(کیتھرائن دی گریٹ) کے نام سے شمارے میں شامل ان کے لیے لکھے گئے مضمون کی شہ سرخی بھی دی گئی ہے۔ٹیٹلر میگزین میں کیٹ مڈلٹن کی زندگی کے حوالے سے شائع کیا گیا مضمون معروف لکھاری اینا پیسٹرناک کی جانب سے لکھا گیا اور انہوں نے مضمون میں کہی جانے والی باتوں کے حوالے سے شاہی محل کے کچھ افراد کو اپنی معلومات کا ذریعہ بنایا ہے۔ٹیٹلر میگزین نے مذکورہ مضمون کو25 مئی کو اپنی میگزین کی ویب سائٹ پر شائع کیا، جس کے بعد مذکورہ مضمون دیکھتے ہی دیکھتے وائرل ہوگیا۔مضمون میں کیٹ مڈلٹن کے جسمانی خدوخال پر بات کرتے ہوئے انہیں شدید پتلا کہا گیا ہے اور ان کی جسمانی ساخت کو ان کی آنجھانی سانس لیڈی ڈیانا سے تشبیہ بھی دی گئی ہے۔مضمون میں کیٹ مڈلٹن کی ذاتی زندگی کے حوالے سے بھی باتیں کی گئی ہیں جبکہ ان کے والدین کے حوالے سے بھی بات کی گئی اور بتایا گیا ہے کہ چوں کہ کیٹ مڈلٹن کی پیدائش شاہی خاندان میں نہیں ہوئی تو انہیں شاہی روایات سیکھنے اور شاہی محل کو اپنانے اور سمجھنے میں وقت لگا۔

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں